حیدرآباد و اطراف

چارمینار اور قلعہ گولکنڈہ کی 6؍جولائی سے دوبارہ کشادگی

حیدرآباد: 4؍جولائی (عصر حاضر) حیدرآباد کے دو تاریخی سیاحتی مقاماتچارمینار اور گولکنڈہ قلعہ سیاحوں کے لیے 6؍جولائی سے دوبارہ کھول دئیے جائیں گے۔ ہندوستان کے آثار قدیمہ کے سروے (اے ایس آئی) کے عہدیداروں نے بتایا کہ ہر روز 2،000 لوگوں کی آمد کی اجازت ہوگی۔ زائرین کے لئے داخلے کے ٹکٹ آن لائن فروخت کیے جائیں گے۔ ٹکٹوں کی فروخت کاؤنٹروں پر نہیں ہوگی۔ سیاح اے ایس آئی کی ویب سائٹ پر ٹکٹ بک کرسکتے ہیں۔

عہدیداروں نے کہا کہ وہ تمام مرکزی طور پر محفوظ یادگاروں اور زائرین کے لئے جاری کردہ حفاظتی پروٹوکول پر سختی سے عمل پیرا ہونا یقینی بنائیں گے۔

سپرنٹنڈنٹ آثار قدیمہ (حیدرآباد سرکل) ، میلان کمار چولی نے عہدیداروں سے ایک میٹنگ کی تاکہ چارمینار اور گولکنڈہ قلعہ کے دوبارہ کھولنے کے انتظامات کو حتمی شکل دیں۔

چہرے کا ماسک اور احتیاطی تدابیر لازمی
زائرین کے لئے چہرے کا ماسک پہننا لازمی ہوگا۔ انہیں معاشرتی دوری کو بھی برقرار رکھنا ہوگا۔

سیاحتی مقامات پر داخل ہونے کے وقت لازمی طور پر حفظان صحت کے لیے اختیار کردہ تدابیر پر عمل در آمد کرنا ہوگا اور تھرمل اسکیننگ بھی کی جائے گی۔ احاطے میں کسی گروپ فوٹوگرافی کی اجازت نہیں ہوگی۔ عہدیداروں نے کہا کہ کھانے پینے کی چیزوں کی بھی اجازت نہیں ہوگی۔

اے ایس آئی کے وضع کردہ معیاری آپریٹنگ طریقہ کار (ایس او پی) کے مطابق ، پارکنگ اور کیف ٹیریا میں رقومات صرف ڈیجیٹل ادائیگی کی اجازت ہوگی۔  اندرون کیفیٹیریا اور کیوسک صرف بوتل کے پانی کو ڈیجیٹل ادائیگی پر پیش کرے گا۔

مارچ کے آخری ہفتے میں لاک ڈاؤن نافذ ہونے کے بعد سے ہی چارمینار اور گولکنڈہ فورٹ زائرین کے لئے بند کردیا گیا تھا تاکہ کوویڈ ۔19 کو پھیلانے پر قابو پالیا جاسکے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
×