ریاست و ملک

من کی بات کو یوٹیوب پر 5.5؍لاکھ سے زیادہ لوگوں کی ناپسندگی کا نیا ریکارڈ

نئی دہلی: 31؍اگسٹ (عصر حاضر)  وزیر اعظم نریندر مودی کے ویڈیوز عام طور پر سراہے جاتے ہیں اور یوٹیوب پر اس کو پسند کرنے والوں کی تعداد ناپسند کرنے والوں کے بالمقابل بہت زیادہ ہوتی ہے۔ شاید پہلی بار کسی بڑے پیمانے پر یوٹیوب پلیٹ فارم پر شائع ہونے والی وزیر اعظم نریندر مودی کی من کی بات کو ساڑھے پانچ لاکھ لوگوں نے اپنی ناپسندیدگیاں درج کیں۔

ناپسندیدگی کی بڑی تعداد کا ذمہ دار ملک بھر سے ناراض نوجوان طلباء کو قرار دیا جاسکتا ہے ، جو فی الحال وزیر اعظم مودی کے اس اعلان سے ناخوش ہیں کہ مرکز انہیں جے ای ای-این ای ای ٹی داخلہ امتحان لکھنے پر مجبور کررہا ہے۔ اتوار کی رات جب یہ دیکھا گیا ،  بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے آفیشل یوٹیوب کے ذریعہ شیئر کی گئی من کی بات والی ویڈیو پر محض 24؍گھنٹوں میں 5.5؍لاکھ لوگ اپنی ناپسندیدگی کا اظہار کرچکے ہیں جبکہ پسند کرنے والوں کی تعداد صرف 82؍ہزار ہے۔

مودی نے اتوار کو من کی بات کے 68 ویں مرتبہ من کی بات پروگرام سے خطاب کیا۔ اگست کے روز اس بات کا اگست ایڈیشن نشر کیا گیا جس کے بعد ملک نے کوویڈ 19 کیسوں میں سب سے زیادہ محض ایک دن میں اضافے کا سنگین عالمی ریکارڈ قائم کیا۔ اس پروگرام سے پہلے ، ہیش ٹیگ # من_کی_نہی_طلباء_کی_بات نے ٹویٹر پر نئے رجحانات طے کیے ، اور اس سے ستمبر میں جے ای ای-این ای ای ٹی امتحانات کے انعقاد سے متعلق خدشات دور کرنے کا مطالبہ کیا۔

تاہم ، انہوں نے اپنے خطاب میں ان خدشات کو ختم نہیں کیا اور اونم تہوار سے لے کر ملک کی کھلونا صنعت تک مختلف موضوعات پر بات کی، جس نے بہت سارے صارفین کو واضح طور پر پریشان کردیا ، جنھوں نے وزیر اعظم سے مزید سنجیدہ سوالوں کے جوابات دینے کا مطالبہ کیا تھا۔

 

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
×