ریاست و ملک

الہ آباد کا روشن باغ بنا ملک کا دوسرا شاہین باغ، ہزاروں خواتین شہریت ترمیمی قانون کے خلاف کررہی ہیں احتجاج

الہ آباد: 14؍جنوری (نعمان بن ثابت قاسمی) پورے ملک میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج برپاہے، دہلی کے شاہین باغ کے علاقہ کی خواتین جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طلباء طالبات پر دہلی پولیس کی جانب سے جارحانہ تشدد کے خلاف میدان میں اتر پڑی ہیں، اورلگاتار ایک مہینہ سے متنازع قانون کے خلاف احتجاج کررہی ہیں، شاہین باغ کی عورتوں سے سبق لیتے ہوئے ملک کے دوسرے حصوں میں بھی اس طرح کے احتجاج دیکھنے کومل رہے ہیں، اترپردیش کے تاریخی شہر الہ آباد شہر کے روشن باغ واقع منصور علی پارک میں اتوار تین بجے سے سیکڑوں خواتین نے اس قانون کے خلاف احتجاج شروع کیا اوراب احتجاج لگاتار زور پکڑتا جارہا ہے، اور تعداد میں اضافہ ہورہاہے، ان خواتین کامطالبہ ہے جب تک شہریت ترمیمی بل کو حکومت کی طرف سے واپس نہیں لیا جاتا یہ احتجاج جاری رہے گا،اس احتجاج میں الہ آباد کی سماجوادی پارٹی معروف لیڈررچا سنگھ نے بھی شرکت کیا، انہوں نے میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کہا، یہ قانون آئین کے خلاف ہے، بھارت کا آئین تمام ہی مذاہب کو یکساں حقوق فراہم کرتاہے لہذا کسی مذہب کو نظر انداز کرنے والے قانون کی ہم مخالفت کرتے ہیں، الہ آباد یونیورسٹی کے طلباء یونین کی لیڈر نہا یادو نے بھی اس احتجاج میں شرکت کیا، دیر رات تک خواتین منصور علی پارک میں ڈٹی رہیں، اتوار سے آج تیسرے دن بھی پورے جوش وخروش کے ساتھ جاری ہے، جیسے جیسے لوگوں کواس احتجاج کے بارے میں معلوم ہورہاہے لوگ شرکت کررہے ہیں،ان خواتین کاجذبہ قابل دیدہے ان کاعزم ہے جب تک شہریت ترمیمی بل کو ختم نہیں کیاجاتا، احتجاج یوں ہی جاری رہے گا،

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
×