آئینۂ دکن

ملک گیر سطح پر بھارت بند کا تلنگانہ اور آندھرا پردیش میں زبردست اثر

حیدرآباد: 8؍دسمبر (عصر حاضر) زرعی قوانین کے خلاف ملک گیر سطح پر بھارت بند شہر حیدآباد میں بھی بہت کامیاب رہا‘ اپوزیشن جماعتوں سمیت کانگریس پارٹی اور ملک گیر کسان تنظیموں کی جانب سے دیا گیا بھارت بند کال کو دونوں تلگو ریاستوں میں حکمران جماعت ٹی آر ایس سمیت اپوزیشن جماعتوں اور کسان تنظیموں کے رہنماؤں اور کارکنوں نے حصہ لیا ہے۔

آر ٹی سی کی بسیں دوپہر کے بعد تک بس ڈپوز میں بند رہیں۔ ریاستوں اور ملک کے مختلف حصوں میں حیدرآباد سے جانے والی بسیں اپنے ڈپو سے باہر نہیں نکلیں۔

ریاستی کابینہ کے وزراء اور حکمران جماعت کے ارکان اسمبلی نے احتجاجی پروگرام منعقد کیا۔ قائدین نے دونوں ریاستوں کی متعدد اہم سڑکوں کا گھیراؤ کیا۔ حیدرآباد۔ وجئے واڑہ قومی شاہراہ کو نارکٹ پلی پارک ایریا میں بلاک کردیا گیا۔ سیری لنگم پلی کے ایم ایل اے نے حیدرآباد۔ پونے نیشنل ہائی وے کو بھی جام کردیا۔ شہر کے آئی ٹی ملازمین نے بھی کسانوں کی ہڑتال میں مدد فراہم کی ہے۔ انہوں نے مادھا پور-ریدورم میٹرو ریل اسٹیشن پر ایک احتجاجی جلوس نکالا۔

دونوں تلگو ریاستوں کے اراکینِ پارلیمنٹ نے بھی کسانوں کے احتجاج کو بھر پور تائید پیش کیہے۔ سنگارینی کولیریز کارکنوں نے مانچیرالہ کے سریرام پور میں بند پروگرام کے لئے اپنی حمایت میں ظاہر کی۔

ریاستی وزیر سیاحت سرینواس نے پارٹی کے دیگر کارکنوں کے ساتھ محبوب نگر ڈپو کے سامنے احتجاجی پروگرام منعقد کیا۔

بائیں بازو کی جماعتوں نے کاکینڈا بس اسٹینڈ کے سامنے احتجاجی پروگرام منعقد کیا۔ ضلع نیلور سے 840 آر ٹی سی بسوں نے اپنی خدمات معطل کرکے خود کو ڈپووں تک محدود کردیا۔ کارکنوں نے شدید نعرے بازی کی اور مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ زراعت کے تین متنازعہ بل واپس لیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
×