احوال وطن

شہر بنگلور میں نبیﷺ کی شان میں گستاخی، پُر امن فضاکو مکدر کرنے کی کوشش

بنگلور: 12؍اگسٹ (عصر حاضر) شہرِ گلستان بنگلور میں نبی ﷺ کی شانِ اقدس میں گستاخی در اصل پُر امن فضا کو مکدر کرنے کی ناپاک و مذموم کوشش ہے، اس موقع پر امیر شریعت کرناٹک مولانا صغیر احمد رشادی مہتمم دارالعلوم سبیل الرشاد بنگلور نے امتِ مسلمہ سے پُر زرو اپیل کرتے ہوئے کہا کہ 11؍ اگست 2020کی شام نوین نامی ایک بد بخت نے اپنے فیس بک پیچ پر ہمارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی شان میں گستاخی کی حد یں پار کرتے ہوئے ایسے بد بختانہ کلمات کا استعمال کیا ہے جس کو پڑھنے ، سننے کی ادنیٰ مسلمان بھی تاب نہیں لا سکتا ۔نتیجتاً بنگلور کے غیور مسلمان جذبات میں آگئے ، لوگ اکٹھے ہونے لگے اور اچانک بہت بڑا مجمع اکھٹا ہو گیا ، ابتداً یہ مجمع پر امن احتجاج کر رہا تھا اسی دوران کچھ بے قابو لوگ(جس میں اپنے اور غیروں کے درمیان تمیز کرنا مشکل ہے) مذکورہ شخص کے مکان پر پتھراؤ کرنے لگے ، کچھ آتشزدگی کے واقعات ہو گئے ۔
سرکار دو عالم صلی اللہ علیہ وسلم کی شان میں گستاخی کرنے والا بد بخت یقینا ایسی عبرتناک سزا کا مستحق ہے کہ جس سے اس طرح کی حرکتوں پر روک لگے اور ملک کو ایک پیغام ملے ، لیکن سزا دینے کا حق حکومت اور قانون کو ہے ، لہٰذا حکومت اور عدلیہ سے اس کا پر زور مطالبہ کیا جائیگا ، اور کوشش کی جائیگی کہ ملزم کیفر کردار کو پہنچے ۔
مسلمان بھائیوں سے اپیل ! جس نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی محبت اور عقیدت میں جمع ہو ئے اور ملزم کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ، اسی نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات میں ہے کہ کسی بھی مذہب یا مذہبی رہنماؤ ں کی شان میں گستاخی اور بے ادبی نہ کریں ، ہر مذہب اور مذہب کے ماننے والوں کی توہین و تحقیر سے بچیں ، اسی طرح آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات میں تشدد سے بچتے ہوئے صبر و تحمل اور امن و سکون سے مسائل کو سنجیدگی کے ساتھ حل کرنے کا حکم ہے ، خصوصاً مسائل کو اپنے بڑوں کے حوالے کرنے اور اپنے آپ کو اپنے بڑوں کے سپرد کر کے ان کی سرپرستی میں مسائل حل کرنے کی تعلیم ہے ۔
ہم اس گستاخ ملعون کی شرمناک حرکت کی مذمت کرتے ہیں اور سخت سزا دینے کا مطالبہ کرتے ہیں اوراس کے بعد پیش آنے والے پتھراؤ یا آتشزدگی کے واقعات کو اچھی نظر سے نہیں دیکھتے نہ ہی اس کو درست ٹہراتے ہیں ۔اپنے بھائیوں سے گذارش کرتے ہیں کہ جذبات کو قابو میں رکھیں ، صبر کے دامن کو تھامے رکھیں ، مسائل کو اپنے بڑوں کے حوالے کریں ۔
ہم بنگلور شہر کے تمام برادران ِ وطن سے بھی گذارش کرتے ہیں کہ امن و امان پر قرار رکھیں ماحول کو خراب ہونے نہ دیں بالخصوص پلکیشی نگر کے یم ایل اے جناب سری نواس سے بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ انہوں نے ہمیشہ حق کا ساتھ دیا ہے انصاف کو پر وان چڑھایا ہے اب بھی وہ اپنی اس روش پر قائم رہ کر کارروائی کو انجام تک پہنچائیں ۔
ہم پھر ایک مرتبہ حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں ملزم کو سخت سے سخت سزا دیں اور معصوم افراد پر بے جا مقدمہ درج کرکے ہراساں نہ کریں ، بے جا اور معصوم افراد کی گرفتاری سے بچیں۔ امن و امان قائم رکھنے کی ہر ممکن کو شش کریں ، اقلیتوں کے اعتماد کی بحالی کے لئے بھی اقدامات کریں ۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
×