احوال وطن

غیر ملکی فنڈز کا غلط استعمال کرنے کا الزام‘ مولانا بدرالدین اجمل پر بھاجپا لیڈر نے درج کروائی ایف آئی آر

گوہاٹی: 5؍دسمبر (عصر حاضر)  آسام میں بی جے پی لیڈر کی جانب سے رکن پارلیمنٹ اور آل انڈیا یونائیٹڈ ڈیموکریٹک فرنٹ (اے آئی یو ڈی ایف) کے صدر مولانا بدرالدین اجمل کے خلاف دہشت گردی سے منسلک غیر ملکی تنظیموں سے فنڈز وصول کرنے کے الزام میں ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

ستیہ رنجن بورہ نے مولانا اجمل کے خلاف شکایت درج کروائی۔ ایک پولیس افسر ، جو اپنا نام ظاہر نہیں کرنا چاہتا ، نے ای ٹی کو ایف آئی آر بتایا کہ اجمل فاؤنڈیشن نے غیرملکی تنظیموں سے حاصل کردہ فنڈز کا غلط استعمال کیا ہے جس میں دہشت گرد تنظیموں کے روابط ہیں۔ ایف آئی آر آئی پی سی اور غیر ملکی شراکت (ضابطہ) ایکٹ کی دفعات کے تحت درج کی گئی ہے۔ ایف آئی آر کی دفعہ 13 کے ساتھ ایف سی اے کو پڑھنے کے لئے دفعہ 120 بی (مجرمانہ سازش) ، 124 اے (بغاوت) اور 420 (دھوکہ دہی) کے تحت ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

این جی او لیگل رائٹس آبزرویٹری (ایل آر او) نے بتایا تھا کہ ترکی اور برطانیہ میں مقیم متعدد تنظیموں نے تعلیم کے لئے امداد کرنے والی تنظیم ، اجمل فاؤنڈیشن کو 69.55 کروڑ روپئے دیئے ہیں۔

ایل آر او نے بتایا کہ کل رقم میں سے صرف 2 کروڑ روپے تعلیمی مقاصد پر خرچ ہوئے۔ ایل آر او نے یہ بھی الزام لگایا کہ ان فنڈنگ ​​ایجنسیوں کے اسلامی دہشت گرد گروہوں جیسے القاعدہ ، حماس اور حزب المجاہدین سے تعلقات ہیں۔

مولانا اجمل نے کہا ، "یہ مجھ پر سیاسی دباؤ ڈالنے کا اقدام ہے تاکہ میں سیاست چھوڑ دوں یا میں کسی دوسری پارٹی کا ساتھ نہ دوں۔ یہ الزام بوڈولینڈ کے علاقائی کونسل انتخابات میں کانگریس کے ساتھ مشترکہ طور پر لڑنے کا فیصلہ کرنے کے دو دن کے اندر سامنے آیا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
×